Hospital Diaries – Last Episode ( 5)

.
‎“ اب آپکو جانا ہو گا”

نرس کمرے میں داخل ہوئی اور بیگم کو گھر روانگی کا پروانہ جاری کیا ۔ “ مریض کا خیال رکھنا ہمارے فرائض میں شامل ہے لہذا آپ بے فکر ہو کر جائیں”
نرس نے تسلی بھرے انداز میں کہا ۔

پاکستان میں تو ہسپتالوں کے برآمدے تک لواحقین سے بھرے ہوتے ہیں۔ لوگ محبت اور فکر میں اپنوں کی عیادت کے لئے آتے ہیں ۔ پھل کاٹ کاٹ کر مریض کو کھلاتے ہیں ۔ مگر یہاں برطانیہ میں مقرر شدہ اوقات کے علاوہ کسی کو بھی مریض کے ساتھ رکنے کی اجازت نہیں۔

یہاں تک کے جب میری بیٹی عنایہ کی پیدائش ہوئی تو نرسوں نے مجھے رات کو ہسپتال رکنے نہ دیا ۔ وہ تو میں نے نائجیرین Nigerian نرسوں کو بتایا کہ میں نائجیریا میں دو سال رہا ہوں اور کچھ وہاں کے قصے سنا کر انہیں ایموشنل بلیک میل کر کے ساتھ ساتھ گرما گرم pizza کھلا کر ہسپتال میں دیر تک قیام کر لیتا تھا مگر رات رکنے کی اجازت نہیں ہوتی تھی ۔
آپ کی ہاں کیا قوانین ہیں ؟ کمنٹس میں بتائیں۔

بیگم کی روانگی کے بعد میں نے فون پہ الارم لگایا 3:30 کا کیونکہ پاکستان اور آسٹریلیا کا T20 میچ دیکھنا تھا ۔ کرکٹ سے ایسی دیوانہ وار محبت کے نتیجے میں ہی یہ گھٹنے کا آپرشن ہوا ہے تو بھلا میچ کیسے چھوڑتا 😊

صبح نرس آئی اور پوچھا ناشتہ میں کیا لو گے ۔ “ آملیٹ “ میں نے جواب دیا
“ ارے میاں یہ سرکاری ہسپتال ہے ، یہ چونچلے یہاں نہیں چلتے “

تو آپ نے پوچھا کیوں ، جو ہے وہ دے دیں پھر”
اور پھر جو ملا وہ آپ تصویر میں دیکھ سکتے ہیں 🤣

فزیو والی آنٹی تشریف لائیں، مجھے مختلف ورزش کروائی اور ضروری ہدایات کے بعد دو عدد Crutches کا تحفہ دے کر گھر روانہ کیا ۔
ہسپتال والے ناشتہ کی تصویر دیکھ کر فرط جذبات میں بیگم نے گھر جاتے ہی پراٹھا اور آملیٹ پیش کیا ۔

اس سفر میں آپ اور آپکے محبت بھرے پیغامات میرے ساتھ رہے اس لئے میں نے ان اقساط کے ذریعے آپ کو اپنی داستان سنائی ، کیسی لگی، ضرور بتائیں اور اردو پڑھنے والوں کے ساتھ شئیر کریں گے تو مجھے خوشی ہو گی۔ چلتا ہوں –
.

اب کے یہ سوچ کے بیمار پڑے ہیں کہ
ہمیں ‎ٹھیک ہونا ہی نہیں ، تیری عیادت کے بغیر

#irfanstraveldiary #irfansrites #urdupost #hospitaldiaries #healthiswealth 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *